غزوہ تبوک – حیاتِ طیبہ کا آخری سفر جہاد

380.00

مولانا عبدالمالک مجاہد | دارالسلام

یہ کوئی عام جنگ نہ تھی ، یہ غزوہ وقت کی سپرپاور رومی سلطنت کے خلاف تھا۔

اس کتاب میں قارئین کو اندازہ ہوگا کہ دین ایسے ہی آسانی سے نہیں پھیل گیا۔اس کے لیے زبردست کوششیں اور محنیتیں کی گئی ہیں

25 in stock

غزوہ تبوک کے لئیے سفر شدید گرمی کے موسم میں عین اس وقت شروع کیا گیا جب مدینہ کے باغات کی کھجوریں پک چکی تھیں۔ اہل مدینہ کے پورے سال کی خوراک کا انحصار انہی کھجوروں پر تھا۔ دین اسلام کے یہ جانثار کسی چیز کی پرواہ نہ کرتے ہوئے سب کحچھ چھوڈ چھاڈ کر اللہ کے رسول ﷺ کا ساتھ دینے کے لئے گھروں سے نکل کھڈے ہوئے۔ اس غزوہ کی اہمیت کا اندازہ اس سے لگائیں کہ اللہ کے رسول ﷺ کم وبیش 60 سال کی عمر مبارک میں بنفس نفیس اس میں حصہ لیتے ہے۔ شدید گرمی کے موسم میں 15 دن کا سفر جانے کا ے کرتے ہیں۔ 20 دن تک تبوک میں قیام فرمانے کے بعد 15 روز واپسی کا سفر طے کرکے مدینہ منورہ  واپس تشریف لاتے ہیں۔  یہ اللہ کے کلمہ کو بلند کرنے کا سفر تھا۔ یہ کوئی عام جنگ نہ تھی ، یہ غزوہ وقت کی سپرپاور رومی سلطنت کے خلاف تھا۔

اس کتاب میں قارئین کو اندازہ ہوگا کہ دین ایسے ہی آسانی سے نہیں پھیل گیا۔اس کے لیے زبردست کوششیں اور محنیتیں کی گئی ہیں

Weight 375 g
Dimensions 17 × 24 × 4 cm
Author

Abdul Malik Mujahid

Binding

Softcover

Pages

159

Language

Urdu

Publisher

Darussalam

Reviews

There are no reviews yet.

Only logged in customers who have purchased this product may leave a review.